Which company’s car should buy in Toyota or Honda in Pakistan…

السلام علیکم میں ہو زوار عوان اور میں امید کرتا ہوں کہ میرے سب دوست خیریت سے ہونگے دوستو مجھ سے سب سے زیادہ پوچھا جانے والا سوال یہ ہوتا

ہے کہ زوار بھائی ہمیں یہ بتائیں گاڑی ٹویٹا کی اچھی ہوتی ہے یا پھر ہنڈا کی تو میں آج کوشش کرتا ہوں کہ اس آرٹیکل میں ایک تفصیلی جواب دوں تاکہ میرے وہ بھائی جو نیو ٹویٹا یا پھر   ہونڈا کی گاڑی پرانی یا نیو خریدنا چاہتے ہیں ان کے لئے آسانی ہو جائے



 

دوستوں جو بھی بھائی لاکھوں روپے لگا کر ایک گاڑی خریدنے جاتا ہے وہ سو بار سوچتا ہے کہ میں کیسی گاڑی ہوں جو پاکستان کے روڈ پاکستان کے موسم اور پاکستان کے ٹریفک کا ہجوم پاکستان کے ڈرائیورز کے لیے موضوع ہو جیسا کہ آپ سب دوست جانتے ہیں کہ پاکستان میں سیڈ ان گاڑیوں میں   ٹویٹا اور ہنڈا کمپنی ایک دوسرے کے مدمقابل ہیں اگر میں بات کرو کہ ان میں سے آپ کو ہنڈاسٹی یا پھر ٹویوٹا جی ایل آئ میں سے کون سی گاڑی خریدنی چاہیے

سب سے پہلے میں ہونڈا کی گاڑیوں کی خوبیاں اور خامیاں بیان کروں گا بعد میں ذکر کروں گا ٹویٹا کا ہنڈا کمپنی کی گاڑیاں پاکستان کے روڈ کنڈیشن موسم اور ڈرائیورز کے لئے ہر جگہ موزوں نہیں ہیں ہاں البتہ بڑے شہروں میں آپ کو اکثر ہنڈا کی گاڑیاں نظر آتی ہوگی انڈہ کی گاڑیاں ہائی وے موٹر وے یا کارپیٹ روڈ کے لیے تو سوٹ ایبل ہیں لیکن دشوار راستے جیسا کہ دیہاتی علاقوں میں ہوتے ہیں یا پھر پہاڑی علاقے ہوتے ہیں وہاں پر ہنڈا کی گاڑیاں سوٹ ایبل نہیں ہے اس کی وجہ ہنڈا کی گاڑیوں کے شاک سخت ہوتے ہیں اور وہ جلد ہی خراب ہو جاتے ہیں اور ہنڈا کی گاڑیوں کے باڈی میں سے جلد آوازیں آنا شروع ہو جاتی ہے



بس ہنڈا کی ایک خوبی ہے کہ ہنڈا کی گاڑیاں بہت خوبصورت اور دلکش ہوتی ہے لیکن مضبوطی میں ٹویٹا پاکستان میں نمبر ون پر ہے لیکن خوبصورت گاڑیاں نہیں ہوتی ٹویٹا کی تو اب میں آپ کو کس کمپنی کا مشورہ دوں گا کہ وہ گاڑی آپ کے لئے سوٹیبل ہوگئی دوستو میں آپ کو مشورہ دوں گا سفر کرتے ہیں اپنی سٹی سے باہر جاتے ہیں یا ایسے رستوں پر سفر کرتے ہیں جہاں پر روڈ کنڈیشن بلکل ہی بیڈ ہوتی ہے تو ٹویٹا آپ کا ہمیشہ ساتھ نبھائے گی اور بہت کم  ہی ہوتا ہے کے ٹویٹا کی گاڑی کوئی کام نکالے یا اس کی سسپینشن کا مسئلہ بننے دوستو آپ نے اکثر دیکھا ہوگا کہ رینٹ پر زیادہ تر ٹویٹا کی گاڑیاں ہی استعمال کی جاتی ہے خصوصا ٹویوٹا جی ایل آئ اس کی وجہ کے ٹویٹر کی گاڑی لمبے سفر کے لئے بہت ہی اچھا ساتھی ہے اگر میں بات کرو پٹرول خرچ کی تو پٹرول خرچ گاڑیوں کا ہنڈا کی گاڑیوں سے زیا دہ ہوتا ہے بس اگر ہنڈا والے خوبصورتی کے ساتھ ساتھ پاکستان کے روڈ کنڈیشن ڈرائیورز اور موسم کو مدنظر رکھ کر گاڑی بناتے

تو میرے خیال میں ہنڈا پاکستان میں ٹوئٹا کو مار دے دیتا اگر آپ نے صرف سٹی ایریا میں گاڑی چلانی ہے اور زیادہ لمبے سفر پر نہیں جانا تو میں آپ کو مشورہ دوں گا کیا آپ ہنڈا کمپنی کی گاڑی لیں اور اگر آپ نے زیادہ فیملی ٹورز کرنے ہوتے ہیں یا پھر آپ جاب کرتے ہیں یا کا کوئی ایسا بزنس ہے کہ آپ کو شہر سے دور جانا پڑتا ہے تو میرے بھائی ٹویٹا ہی لیں کوئٹہ کی گاڑیوں کی اگر میں سیل ویلیو کی بات کرو تو اور آل پاکستان میں بنسبت ہنڈا سے زیادہ ہے اور اب بھی اپنی گاڑیوں کی خوبصورتی پر بھرپور توجہ دے رہا ہے جس کی مثال ٹویٹا کرولا ٹوئنٹی ہے جس کی ویب سائٹ پر موجود ہے تو آخر میں بس اتنا ہی کہوں گا کہ آپ ٹویٹا کو زیادہ ترجیح دی اور دعا بھی کریں کہ پاکستان میں گاڑیوں کے پرائس بھی اس حد تک ہو کہ عام آدمی بھی خرید سکے اگر آپ کو میرا آج کا یہ آرٹیکل پسند آیا ہے تو اپنی فیس بک واٹس ایپ دوستوں کے ساتھ شیئر لازمی کرنا اور کمنٹس باکس میں اپنی رائے بھی ضرور دیا کریں گے اب آپ کا ہوسٹ زوار اعوان آپ سے اجازت چاہتا ہے اپنا بہت خیال رکھا کریں اللہ آپ کا حامی و ناصر رہے

Please follow and like us:

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *