Sat. Jun 1st, 2019

کیا آپ کی گاڑی کا الارم سسٹم آپکی گاڑی کو چوری سے بچاسکتا ہے ؟

اسلام علیکم دوستو میں امید کرتا ہوں کے آپ سب ہوں گے خیروعافیت سے آج ہم بات کریں گے کیا آپ کی گاڑی الارم سسٹم کے ساتھ محفوظ ہے

پاکستان میں اب نئی گاڑیاں انشورنس کے ساتھ ملتی ہیں اور کچھ میں تو ای موبلیزر بھی لگا ہوا ہوتا ہے جس کا مقصد گاڑیوں کے پیو کی حفاظت ہے البتہ گاڑیاں رکھنے والے اکثر افراد حفاظت کے لیے الارم سسٹم پر زیادہ بھروسہ کرتے ہیں جوعام سٹور پر دستیاب ہوجاتا ہے لیکن کیا کبھی آپ نے سوچا کہ الارم سسٹم کا نظام آپ کی گاڑی کو کیسے  محفوظ بناتا ہے آئیے آج اس پر تفصیلی نظر ڈالتے ہیں

گاڑیوں کی حفاظت کا روایتی نظام محض ایک برقی    پرزہ ہے جو گاڑی کی غیر معمولی لرزش کو جانچتا اور اگر کوئی گڑبڑ محسوس ہو تو گاڑی کا انجن بند کردیتا ہے اور آواز کے شور سے اطلاع کرتا ہے کچھ جدید آلات میں ان کو ہائی جیک کرنے سے بچاؤ کا  نظام بھی لگایا جاتا ہے الارم سسٹم اس وقت زیادہ کارآمد ہوتا ہے جب آپ کی گاڑی عام سڑک پر کھڑی ہو جہاں کچھ لوگ ہر وقت موجود رہتے ہو اور وہ کسی شخص کو گاڑی میں چھیڑ چھاڑ کرتے دیکھ سکیں الارم بجنے کی صورت میں اس کی طرف متوجہ ہو سکیں لیکن اگر آپ کی گاڑی گیراج میں یا کسی ویران جگہ کھڑی ہے جس جگہ پر لوگوں کا گزر کم ہو تو یہ جدید آلات بھی آپکی گاڑی کی حفاظت نہیں کر سکتے دراصل یہ نظام بہت سادہ کام کرتے ہیں اگر آپ کی گاڑی سے کوئی چھیڑ چھاڑ کرتا ہے تو یہ نظام الارم بجانے کے ساتھ اگنیشن سسٹم کو پہنچنے والی پاور کو بھی منقطع کر دیتا ہے اور اس کے بعد تمام کام یہ الارم سسٹم ہی چلاتا ہے پھر جب یہ سسٹم بند ہوتا ہے تو ایگنیشن سسٹم کو پہنچنے والی پاور بحال ہو جاتی ہے اصل مسئلہ یہ ہے کہ عام طور پر یہ نظام اسٹیرنگ کے نیچے لگایا جاتا ہے جس تک پہنچنے میں زیادہ وقت نہیں لگتا اور نہ ہی زیادہ محنت کرنی پڑتی ہے کسی ویران جگہ پر کھڑی ہے تو کوئی بھی بدلیات شاکر اس پورے نظام کو چند سیکنڈز میں صرف چار کاٹنے کی قینچی سے بےکار کر سکتا ہے کچھ دن پہلے ایک جدید ھندی فری الارم سسٹم کی جانچ کر رہا تھا تو یہ جان کر مجھے حیرت ہوئی کے بغیر چابیوں اور قدرے بہتر سینسر کا حامل اس نظام میں بھی تاروں کا استعمال بالکل ویسا ہی استعمال کیا جارہا ہے جس کا ذکر میں نے اوپر کیا ہے اس سے مجھے اندازہ ہوا کہ اصل مسئلہ الارم سسٹم کا نہیں ہے بلکہ تکنیک کا ہے جس کو استعمال کرکے یہ گاڑیوں میں لگایا جاتا ہے مجھے یقین ہے کہ گاڑی میں کسی دوسری محفوظ جگہ لگانے اور تاروں کی نسبت بہتر سیٹنگ سے عام الارم سسٹم کو بھی مزید بہتر بنایا جا سکتا ہے لیکن اصل سوال یہ ہے کہ کیا ہمارے ماہرین کے پاس اس بارے میں سوچنے کے لئے وقت ہے آج کا آرٹیکل اگر آپ کو پسند آیا ہے تو شیر ضرور کرنا کمنٹس باکس میں اپنی رائے کا اظہار ضرور کیا کریں اللہ آپ کا حامی و ناصر رہے خداحافظ

Please follow and like us:

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *